محبت پرست - Mohabbat Parast 6 Reviews

By: Dr Atteeq

Hardcopy Price

PK Flag
PKR 800
INR Flag
INR 700
USD Flag
USD 5

اپنی خواہشات لامحدود کر لی ہوں اور جن میں سے بیشتر کی تکمیل ہی ناممکن ہو تو وہ مکمل کیسے ہو سکتا ہے؟

ایک ایسا ناول جو زندگی کو دیکھنے کا زاویۂ نظر تبدیل کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

 

کتاب کے بارے میں مصنف کی زبانی:

میں نے یہ کہانی تراشی نہیں بس اپنے آپ کو سنانے کی کوشش کی ہے۔۔۔میں سناتا چلا گیا اور الفاظ کاغذ کے صفحات پر بکھرتے چلے گئے۔ میں سمجھتا ہوں کہ جو کہانی دوسروں کو سنائی جاتی ہے وہ سچی یا جھوٹی ہو سکتی ہے۔ اِس کے برعکس جو کہانی انسان اپنے آپ کو ، اپنے من کو سناتا ہے وہ ہمیشہ سچی ہوتی ہے ۔ یہ الگ بات کہ اُسے وہ دوسروں سے بھی بانٹ سکتا ہے یا نہیں۔ دوسروں کو سنانے کے لیے کہانی تراشی جاتی ہے جبکہ اپنے آپ کو سنانے کے لیے اُگلی جاتی ہے۔ “محبت پرست” کی کہانی بھی تراشی نہیں گئی بلکہ اُگلی گئی ہے۔

میرا ماننا ہے کہ انسان فطرتاً محبت پرست ہے اور عبادت محبت ہی کی ایک شکل ہے جو کہ صرف خدا کے لیے مخصوص ہے۔۔۔ خدا کے لیے یہ عبادت اور انسانوں کے لیے عقیدت ہے۔ مال و زر سے پیار بت پرستی اور احساسات کا پرچار محبت پرستی ہے۔ انسان اگر رائج الوقت طرزِ زندگی سے ذرا سا انحراف کر کے مال ومتاع اور اثر و رسوخ کو کچھ دیر کے لیے زندگی سے حذف کر ڈالے اور بھول جائے کہ کسی انسان کے لیے ان چیزوں کی انسانی جذبات اور احساسات سے زیادہ اہمیت ہو سکتی ہے تو اِس کا مطلب ہے کہ اُس نے بت پرستی ترک کر کے محبت پرستی شروع کر دی ہے۔

یہ کہانی ایک محبت پرست کے خود آگاہی اور سیلف ایکچو لائزیشن کی جانب سفر پر مشتمل ہے۔ جو ایک انسان سے محبت کر کے اپنے آپ سے یہ سوالات پوچھنے اور ان کا جواب تلاشنے کی جستجو میں غوطہ زن ہونےکی صلاحیت رکھتا ہے کہ ۔۔۔ کیا مجھے اِس دنیا میں کسی انسان کے حصول کی جنگ لڑنے بھیجا گیا ہے؟ کسی دلکش اور من پسند جسم تک رسائی کی جنگ ۔ ایک عارضی لذت کا تعاقب کرنے اور ایک سطحی اور نا معلوم سی خوشی کو جیتنے کی تگ و دو ۔ کیا انسان کا اللہ تعالیٰ سے رشتہ فنا ہو جانے والی چیزوں سے لگاؤ اور محبت پر منحصر ہے؟ اتنا بڑا میلہ سجانے، اِس شاہکار تصویر میں رنگ بھرنے اور اِس دیار کو پُررونق بنانے کے لیے اپنا نائب تخلیق کرنے کا مقصد اُسے چند عارضی سہاروں کے رحم و کرم پر چھوڑنا اور کسی سراب میں الجھانا ہی تو نہیں۔۔۔ کیا تخلیقِ انسانیت کا مقصدمحض اپنی چھوٹی چھوٹی الجھنوں کو سنوارنا ہے؟

اگر آپ محبت کے اصل مفہوم اور زندگی کے مقصد اور رعنائیوں کو سمجھنے کی جستجو میں اپنے ذہن کو الجھانا چاہتے ہیں تو آیئے محبت پرست کے اِس دلفریب سفر میں میرا ہمسفر بنیئے۔

اِس کہانی میں محبت ، رومانس ، پیشن اور جہدِ مسلسل کو ایک لڑی میں پرونے کی کوشش کی گئی ہے۔ میری نظر میں یہ کہانی ۔۔۔ ہماری دنیا جیسی شکل اختیار کر چکی ہے اور جیسا اس کو تصوراً ہونا چاہیئے تھا۔۔ان دو صورتِ احوال کے تصادم کے نتیجے میں پیدا ہونے والی پیچید گیوں اور ان سے نبرد آزما ایک محبت پرست کی کشمکش کے گِرد گھومتی ہے۔

 

ISBN (Digital)
ISBN (Hard copy) 978-969-749-221-3
Total Pages 322
Language Urdu
Estimated Reading Time 8 hours
Genre Popular Fiction
Published By Daastan
Published On 12 Mar 2024
No videos available
Dr Atteeq

Dr Atteeq

ڈاکٹر عتیق پاکستانی نژاد آسڑیلین ناول نگار ہیں جو بنیادی طور پر ویژنری اور میٹا فیزیکل فکشن اور انسپائریشنل رومانس لکھتے ہیں۔ ان کا ماننا ہے کہ لفظ بولتے ضرور ہیں مگر اُس وقت تک چند مہمل سے حروفِ تہجی کا مجموعہ ہی رہتے ہیں جب تک کسی کی سماعتیں انہیں معنی عطا کر کے معتبر نہ کر دیں۔

پیشے کے لحاظ سے وہ سائنس دان ہیں۔ جو آسٹریلیا میں دنیا کے صفِ اول کے ٹرانسپورٹ سے وابستہ تحقیقی ادارے میں خدمات سر انجام دے رہے ہیں۔ تعلیمی قابلیت کے حوالے سے انہوں نے مصر کی عین شمس یونیورسٹی سے جیالوجی میں ڈاکٹریٹ کی ڈگری حاصل کی۔ اِس سے قبل لاہور کی پنجاب یونیورسٹی سے جیالوجی میں ہی بی۔ایس۔سی اور ایم۔ایس۔سی کی ڈگریاں بھی حاصل کر چکے ہیں۔ مزید برآں آسٹریلیا سے سول انجنیئرنگ اور میلبورن یونیورسٹی سے پراجیکٹ مینجمنٹ میں ماسٹرڈگریاں ان کے کریڈٹ پر ہیں۔

آسٹریلیا میں مستقل سکونت اختیار کرنے سے پہلے وہ تقریباً دس برس تک مڈل ایسٹ میں مقیم رہے۔ جہاں وہ ایک ملٹی نیشنل کمپنی کی انٹر نیشنل ٹیم کا حصہ تھے۔ جاب کےسلسلہ میں انہیں ایشیاء، افریقہ اور یورپ کے پچیس ممالک کابار بار سفر کرنے اور مختلف معاشروں کے وسائل، مسائل اور رویوں کو قریب سے دیکھنے کا موقع ملا۔

اردو ادب سے لگاؤ کے رجحان کے ساتھ قدرت نے انہیں پیدا کیا ہے۔ اِس کے علاوہ سائیکالوجی، سوشیالوجی اور فلاسفی میں گہری دلچسپی رکھتے ہیں۔ سالہاسال مطالعہ کرنے ، زندگی کے نشیب و فراز کا سامنا کرنے اور اس سے وابستہ ازلی تلخیوں کو محسوس کرنے کے بعد انہوں نے کری ایٹو رائیٹنگ کو باقاعدہ سیکھنے کے بعد قلم اُٹھایا اور حروف کو لفظوں اور لفظوں کو جملوں کے سانچے میں ڈھالنا شروع کیا۔محبت پرست ان کا پہلا ناول ہےجس میں ان کے وسیع مطالعے، مشاہدے، تجربے اور تجزیئے کی جھلک واضح طور پر دیکھی اور محسوس کی جا سکتی ہے۔

Reviews


Nov 25, 2023


ڈاکٹر عتیق پاکستانی نژاد آسٹریلین ناول نگار ہیں۔ "محبت پرست" ان کا پہلا ناول ہے جس میں ان کے وسیع مشاہدے، تجربے، تجزیئے اور مطالعے کی واضح طور پر جھلک دکھائی دیتی ہے۔
کچھ کتابیں ایسی ہوتی ہیں جو انسان کو جکڑ لیتی ہیں۔ ایسی دلچسپ کتابوں میں انسان کئی زندگیاں جیتا ہے۔ جیسے جیسے وہ کتاب اختتام کو پہنچتی ہے دل اداس ہو جاتا ہے۔ یہ کتاب بھی ایسی ہی ہے جو آپ کو بیک وقت رلائے گی بھی اور ہنسائے گی بھی۔ بہت عرصے کے بعد پاپولر فکشن کی کوئی کتاب پڑھی ہے اور اس کتاب نے بالکل بھی مایوس نہیں کیا۔
عشقِ مجازی پر مبنی یہ کہانی حرمین اور رباب کے گرد گھومتی ہے۔ حرمین ایک کامیاب انجنئیر ہے جو اپنی زندگی میں سب کچھ حاصل کرلیتا ہے مگر محبت کے آگے بے بس ہو جاتا ہے۔ اس کہانی کی سب سے بہترین بات مصنف کا دلچسپ انداز بیان ہے۔ ڈاکٹر عتیق اور ہاشم ندیم کے اندازِ بیاں میں مماثلت پائی جاتی ہے مگر مجھے یہ ناول ہاشم ندیم کے ناولوں سے بہتر لگا۔ (کم از کم اس میں ہیرو کو محبت نہ ملنے پر دربار میں نہیں بٹھایا گیا۔)
اس کتاب میں محبت کے موضوع سے ہٹ کر مصنف نے زندگی کے کچھ تلخ اور پچیدہ حقائق کو بھی بیان کیا ہے۔ مصنف کا زندگی کے متعلق مشاہدہ وسیع ہے۔ کہانی رواں ہے اور کئی بھی بوریت کا احساس نہیں ہوتا۔ کتاب میں موجود اشعار کہانی کا مزہ دوبالا کر دیتے ہیں۔

Werda Shah

Rating:

Jul 01, 2023

"کئی محبتیں ایک طوفان کی صورت آتی ہیں اور ہر چیز کو تہس نہس کر کے گزر جاتی ہیں جبکہ کچھ محبتیں خوشحالی اور ہریالی لاتی ہیں
یہ انسان کا نصیب ہے کہ اسکے حصے میں کونسی محبت آتی ہے۔"????


"محبت پرست"
کہانی ہے محبت کی۔۔
اس محبت کو پا لینے کی جستجو کی۔۔
اور اس جستجو میں خود کی تلاش کا سفر طے کرنے کی۔۔

لیکن یہ روایتی'عشقِ حقیقی' والی کہانیوں سے بہت مختلف تھی۔۔
کہانی میں تسلسل اور روانی قابلِ تعریف ہے۔۔
اس کے دلچسپ انداز نے کہیں بھی بور نہیں ہونے دیا۔۔
پڑھنے کےدوران بہت سی نئی باتیں بھی معلوم ہوئیں۔
ناول کی شروعات میں مجھے لکھنے کا انداز ہاشم ندیم سے کافی مماثلت رکھتا محسوس ہوا۔۔ شاید ہم نے کسی کی تحریریں زیادہ پڑھی ہوں تو غیر محسوس انداز میں وہ ہماری تحریر میں بھی جھلکتا ہے۔۔۔(یہ بس میرا ذاتی اندازہ ہے اب یہ بات کتنی ٹھیک ہے یہ تو مصنف ہی بتا سکتے ہیں????)
اور یہ رائٹر کا پہلا ناول تھا تو ہاں۔۔پہلی کتاب اکثر کسی سے انسپائرڈ ہوتی ہے۔۔آگے چل کر وقت کے ساتھ ساتھ انسان کا اپنا منفرد انداز ابھرتا ہے۔۔

خیر بہت کم لوگوں کی پہلی تحریر میں اتنی پختگی ہوتی ہے کہ پڑھتے ہوۓ وقت گزرنے کا احساس ہی نہ ہو۔۔۔اور میرے ساتھ یہی ہوا۔۔
وہ الگ بات ہے کہ پہلے سو صفحات ایک ہی نشست میں پڑھنے کے بعد میں نے باقی کتاب بہت تھوڑی ????تھوڑی کرکے پڑھی کہ کہیں جلدی ختم نہ ہوجاۓ
۔
کہانی کو بہت خوبصورتی سے لفظوں میں پرویا گیا ہے اور شروع سے آخر تک کہیں بھی بے جا طوالت سے کام نہیں لیا گیا۔۔۔

ایک اور بات جس نے مجھے متاثر کیا ہے وہ شاعری کا استعمال تھا جو بہت عمدہ انداز سے کیا گیا تھا????✨
بہتتتت عرصے بعد اگر کوئی نیا ناول مجھے واقعی پسند آیا ہے تو وہ یہ ہے۔۔????????????

اور آخر میں چند سطریں جو مجھے بے حد پسند آئی ہیں:

"زندگی ایک گہرا راز ہے اور ہمیشہ ایک راز ہی رہے گا۔جس کو انسان کبھی بھی پا نہیں سکے گا۔
جو سمجھ میں آگیا وہ راز کی کہاں رہا!۔۔ ہاں رازوں کو جان لینے کی ریاضت۔۔ "فلسفہ" ہے۔
اور اس فلسفے کو سمجھنے کی جُستجو۔۔
"زندگی"۔

@girl.withpaintbrush

Ehab Aslam

Rating:

Jun 20, 2023

Jun 20, 2023

محبت پرست ان کتابوں میں سے ایک ہے جس کو میں نے وقفے وقفے سے پڑھا ہے۔ اس کی وجہ یہی ہے کہ پچھلے تین چار مہینوں سے میں اپنی نوکری میں اس قدر گم ہو گیا ہوں، کہ نہ پڑھنے کا وقت ملتا ہے نہ سوچنے کا۔

محبت پرست بہت الجھی ہوئی کہانی ہے۔ اس کا اندازہ اس بات سے لگائیں کہ یہ کسی ایک جونرا کے اندر سمانے میں ناکام ہے۔ اوپر اوپر سے ہم دیکھیں تو یہ محبت کی رومانوی داستان کی طرح محسوس ہوتی ہے مگر ہمہ وقت یہ انسانی نفسیات کے تمام معیار و حدود توڑتا بھی نظر آتا ہے جس کیلئے مجھے سمجھ نہیں آ رہا کہ کیا لفظ استعمال کیا جائے؟
مابعدالطبعیاتی فکشن کی جھلک بھی اس ناول میں بخوبی دیکھی جا سکتی ہے۔

ناول کا مثبت پہلو اس کی زبان ہے، جو کافی میچور فیل ہوتی ہے۔ ناول کا پیس کمال ہے مگر سستی کا بھی شکار رہتا ہے۔ کہانی کہیں سنسنی خیز سے بھاگتی ہے تو کہیں بےجا طوالت کا شکار بھی نظر آتی ہے۔

کچھ کہانیاں ایسی ہوتی ہیں جو بھلے آپ کیلئے یادگار نہ ہوں، مگر ان کو پڑھ کر آپ مطمئن ہوتے ہیں کہ چلو جتنا وقت اس کو پڑھنے میں لگایا، وہ کسی اور میں لگاتا تو بھی ٹھیک تھا، مگر اس پہ وقت لگانے سے وقت کم از کم ضائع بھی نہ ہوا۔ میرے لئے محبت پرست یہی تھی۔

Mehr Un Nisa

Rating:

Jun 15, 2023

Aslam o Alikum!
I was too excited to read this one as it contains philosophy, tragedy, drama, a love story, destiny and many more.
Reading this I realized, how sometimes we are too helpless and we couldn't able to do or to have what we actually want. It happens to us, it happens to almost everyone but the real thing is how we react to the situation and how we handle it.
The author has deeply evaluate each and everything. His choice of words were good too.

May 01, 2023

Books in Same Genre